0

کولیسٹرول گھٹانا ہے تو انگور کھائیے

لاس اینجلس:yامریکی طبّی ماہرین نے دریافت کیا ہے کہ روزانہ صرف ایک پاؤ (252 گرام) انگور یا کشمش کھانے سے جسم میں مضر کولیسٹرول کم ہوجاتا ہے۔

یہ بات انہوں نے 20 صحت مند رضاکاروں پر محدود پیمانے کے آزمائشی مطالعے (پائلٹ اسٹڈی) کے بعد دریافت کی ہے جو 8 ہفتے تک جاری رہا۔ رضاکاروں کی عمر 18 سے 55 سال کے درمیان تھی۔

بتاتے چلیں کہ انگور کے طبّی فوائد صدیوں سے ہمارے علم میں ہیں جبکہ جدید سائنسی تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ اس میں کئی طرح کے مفید نباتاتی مرکبات یعنی فائٹو کیمیکلز پائے جاتے ہیں جن میں کیٹاچنز، پرو اینتھوسیانیڈنز، اینتھوسیانینز، لیوکو اینتھو سیانیڈنز، کوئرسیٹن، کیمپفیرول، اسٹلبینز، ایلاجک ایسڈ اور ہائیڈروسنامیٹس شامل ہیں۔ ان کے علاوہ انگور میں غذائی ریشہ (فائبر) بھی بھرپور ہوتا ہے۔

مزید حالیہ تحقیقات سے انگور، انگور کے رس، یا انگور سے حاصل کردہ ’فینول‘ قسم کے مرکبات کو بھی اینٹی آکسیڈینٹ کے علاوہ جراثیم اور وائرسوں کے خلاف مؤثر پایا گیا ہے۔

نئے مطالعے میں ان تحقیقات کو مزید آگے بڑھایا گیا ہے جو یونیورسٹی آف کیلی فورنیا لاس اینجلس میں ڈاکٹر ژاؤپنگ اور ان کے ساتھیوں نے انجام دیا ہے۔

اس میں پہلے چار ہفتوں کے دوران تمام رضاکاروں کو کم پولی فینول والی غذا پر رکھا گیا جس کے بعد اگلے چار ہفتوں تک یہی غذا جاری رکھتے ہوئے اس میں خشک انگوروں کے صرف 46 گرام سفوف کا یومیہ اضافہ کردیا گیا۔

انگور کے سفوف کی یہ مقدار 252 گرام تازہ انگوروں کے برابر تھی۔

مطالعہ شروع ہونے سے پہلے اور اس کے بعد، تمام رضاکاروں میں کولیسٹرول اور صفراوی تیزاب (بائل ایسڈ) کے علاوہ ان کے پیٹ میں خردنامیوں کے مجموعے (مائیکروبایوم) کا جائزہ لیا گیا۔

جائزے اور موازنے کے بعد معلوم ہوا کہ چار ہفتوں تک خشک انگور کا 46 گرام سفوف روزانہ استعمال کرنے کے بعد ان رضاکاروں میں کولیسٹرول کی مجموعی مقدار 6.1 فیصد کم ہوگئی تھی جبکہ مضرِ صحت کولیسٹرول (ایل ڈی ایل) 5.9 فیصد کم ہوا تھا۔

ان کے پیٹ میں نقصان دہ جرثومے کم ہوئے تھے جبکہ صحت بخش جراثیم کی تعداد میں اضافہ ہوا تھا جو بلا شبہ ایک اچھی خبر تھی۔

ان میں سے بھی ’’ایکرمینسیا‘‘ نامی جرثوموں کی ایک قسم میں اضافہ ہوا جو گلوکوز اور چکنائی کو توڑ کر ہضم کرنے میں مدد دیتا ہے جبکہ آنتوں کی اندرونی جھلی کو بھی مضبوط بناتا ہے۔

کولیسٹرول کے ہاضمے پر اثر انداز ہونے والے صفراوی تیزابوں کی مقدار بھی مطالعے کے اختتام پر 40.9 فیصد کم دیکھی گئی جو بہتر صحت کی علامت ہے۔

’’ہم نے پیٹ کے جرثوموں پر انگور کے مفید اثرات دریافت کیے ہیں جو بہت زبردست بات ہے، کیونکہ پیٹ کا درست رہنا، اچھی صحت کےلیے بے حد ضروری ہے،‘‘ ڈاکٹر لی نے کہا۔

نوٹ: اس تحقیق کی تفصیلات آن لائن ریسرچ جرنل ’’نیوٹریئنٹس‘‘ کے تازہ شمارے میں شائع ہوئی ہیں۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں